کھانے میں استعمال ہونے والے مصالحوں کی حیرت انگیز خوبیاں

004

امریکا میں گزشتہ کئی سال سے اپنے لذیذ کھانوں سے لوگوں کے دل جیتنے والے بھارتی نژاد فلائڈ کاردوز نے امریکی محققین کے ساتھ کئی دہائیوں کی ریسرچ کے بعد انکشاف کیا ہے کہ کھانوں کے ذائقوں کو دوبالا کرنے والے چند مصالحے انسانی صحت کے لیے انتہائی مفید ہیں اور کئی خطرناک بیماریوں کے خلاف مزاحمت کرتے ہیں۔
ہلدی کے حیرت انگیز فائدے: فلائد کاردوز کا کہنا ہے کہ ہلدی اکثر کھانوں کی زینت تو بڑھا دیتی لیکن بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ ہلدی میں اینٹی آکسیڈینٹ عنصر موجود ہوتا ہے جو کینسر کی بیماری کو دور کرنے کی خوبیاں اپنے اندر رکھتا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ اگر ہلدی کے ساتھ کالی مرچ کو ملا دیا جائے تو اس کی خوبیاں اور بھی بڑھ جاتی ہیں۔ یونیورسٹی آف مشی گن کمپری ہینسو کینسر سینٹر کی تحقیق کے مطابق ہلدی اور کالی مرچ کا آمیزہ چھاتی کے کینسر اور ٹیومر کے خلاف زبردست مزاحمت کا کام دیتا ہے۔
ادرک اور سویا: کاردوز نے اس کے علاوہ کچھ اور بھی ایسے صحت مند مصالحوں کا پتا چلایا ہے جو کینسر کے خلاف علاج کا کام کرتے ہیں، سویا اور ادرک کی جڑ کو ملا کر استعمال کیا جائے تو یہ کینسر سیل کو مارنے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ سونف یا سویا کو عام طور پر بھارت، پاکستان، مشرق وسطی اور بحیرہ روم کے رہنے والے لوگ اپنے کھانوں میں استعمال کرتے ہیں اس میں انیتھول جیسا عنصر ہوتا ہے جو کینسر سیل کو بڑھنے سے روکتا ہے جب کہ ادرک میں کینسر کے خلاف کام کرنے والے دواہم مرکب پائے جاتے ہیں جنہیں گیگرول اور زنگرول کہا جاتا ہے جب کہ ان میں اینٹی کینسر اور جلن کے خلاف لڑنے کی خوبیاں موجود ہوتی ہیں۔
مرچوں سے علاج: ہری مرچ میں شامل کیسیسن نامی مرکب کینسر سیل کے خلاف جنگ کرتا ہے۔ تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ مرچ میں حیرت انگیز طورہرسرطان خون کے سیل کو ختم کرنے کی خاصیت ہوتی ہے جب کہ لہسن، پیاز اوریری پیاز بھی کینسر کو روکنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں۔
فلائد کاردوس کا کہنا ہے کہ یہ مصالحے کینسر کے خلاف مفید تو ہیں لیکن خبردار اس کا کھانوں میں متوازن استعمال ہی صحت کا ضامن ہے۔

Leave a Reply